زمین پرجنت، کشمیر )مسئلہ کشمیر کا حل)

کشمیر! زمینپرجنت، کشمیر ! ایک کہانی وہ کہانی جو آج تک ہم کتابوں میں پڑھتے آ رہے ہیں۔ وہ کہانی جس کی ابتدا ہوئی آج سے 70 سال پہلے پاکستان کے بننے اور ہندوستان کے بٹوارے سے ہوئی۔

کشمیر! زمین بر جنت، کشمیر ! ایک کہانی وہ کہانی جو آج تک ہم کتابوں میں پڑھتے آ رہے ہیں۔ وہ کہانی جس کی ابتدا ہوئی آج سے 70 سال پہلے پاکستان کے بننے اور ہندوستان کے بٹوارے سے ہوئی۔ کشمیر ! پاکستان اور بھارت کا سب سے بڑا مسئلہ جو آج تک اپنے حل ہونے کا انتظار کر دیا ہے ۔ ایک ایسا مسئلہ جو آج کشمیریوں کی آزادی کی جنگ میں تبدیل ہو چکا ہے۔

وہ آزادی جو انہیں بھارتی مظالم سے نجات دلوائے۔ وہ آزادی جس کا حق ان سے چھین لیا گیا۔ وہ آزادی جو انہیں بھارتی سکیورٹی فورسز سے چاہئے۔ جنہوں نے گزشتہ 27 سالوں میں تقریباً 94 ہزار کشمیریوں کو ہلاک کیا ہے۔ جن میں سے دس ہزار سے زائد خواتین کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا اور بھارت کی مسلح افواج کے دفعہ 7، خصوصی طاقتور ایکٹ 1990ءجس میں سکیورٹی فورسز کو انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر عدالت سے معافی ہے، 7 ہزار سے زائد افراد کو قتل کر چکے ہیں اور تمام معصوم کشمیریوں پر کرفیو لگا کر انہیں تمام ضروریات زندگی اور تو اور تعیلم سے بھی دور رکھا ہوا ہے۔

ویسے تو کشمیری 1989ءسے آزادی کی جدوجہد کر رہے ہیں لیکن بھارت نے برہان وانی کی شہادت کو دہشت گردی قرار دے کر کشمیر میں مزید سکیورٹی فورسز اور پابندیاں عائد کرنے کا موقع ڈھونڈ لیا اور دوسری طرف بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے یہ الفاظ ہیں کہ ”کشمیر کا مسئلہ گولی سے نہیں محبت سے حل ہو سکتا ہے۔“ اس کا مطلب بھارت یہ جانتا ہے کہ گولی اس مسئلے کا حل نہیں لیکن پھر بھی وہ اس پر عملدرآمد نہیں کرتا۔

عنی وہ چاہتا ہی نہیں کہ یہ مسئلہ حل ہو۔ اور نہ یہ کہ کشمیری آزاد فضا میں سانس لیں تو پھر وہ کیا چاہتا ہے؟اصل میں اسے کشمیریوں کو قابص نہیں کرنا، اسے تو کشمیر چاہئے۔ چاہے اس کے لئے تمام کشمیریوں کو ہی کیوں نہ موت کے گھاٹ اتارنا پڑے۔ بظاہر تو دنیا کو یہی لگتا ہے کہ کشمیر کی جنگ پانی کی وجہ سے ہو رہی ہے لیکن پانی کا تو بہانہ ہے کیونکہ بھارت تو پہلے ہی اپنے دریاو¿ں پر ڈیم بنا چکا ہے۔

تو پھر! آخر وہ کشمیر کو اپنے ہاتھوں سے کیوں نہیں جانے دینا چاہتا؟ دراصل جہاں کشمیر واقع ہے وہ خطہ ایسا ہے جہاں یورینیم کے بے حد زیادہ ذخائر موجود ہیں اور دونوں ارد گرد ممالک ایٹمی قوت ہیں تو بھارت کی یہ کوشش ہے کہ اس خطے کو پاکستان کے خلاف اس طرح استعمال کیا جائے کہ وہ تباہ و برباد ہو جائے۔ بھارت کی کشمیر میں بربریت اور بے امنی قائم کرنے کی ایک بڑی وجہ یہ بھی ہے کہ اگر اس خطے کے لوگ تعلیم حاصل کر لیں اور قدرت کے اس خزانے سے مستفید ہو گئے تو سب سے زیادہ نقصان بھارت کا ہی ہو گا۔

کشمیر کے وہاں ہونے کی وجہ سے پاکستان اور بھارت کے بارڈرز بھی دور ہیں اور اگر کشمیر پاکستان کا حصہ بن گیا تو اس سے سب سے بڑا خطرہ بھارت کو ہو گا۔ بھارت اس خطے پر قبضہ کر کے پاکستان کے اہم ترین شہروں تک رسائی حاصل کرنا چاہتا ہے۔ تو کیا ہمیشہ کشمیر کے لوگ آزادی کے لئے ترستے رہےں گے؟ کیا اس مسئلے کا کوئی حل نہیں؟ کیا ہم ان بے گناہ لوگوں کا قتل عام دیکھ کر یوں ہی خاموش تماشائی بنے بیٹھے رہیں گے؟ کیا ہم یہی سوچ کر خوش ہوتے جائںی گے کہ کشمیری وہاں پاکستان کا جھنڈا لہرا رہے ہیں اور وہ پاکستان کا حصہ بننا چاہتے ہیں۔

کیا ہم نے کبھی اس بات پر غور کیا کہ شاید وہ نہتے لوگ اپنے ہر مظاہرے، ہر احتجاج میں پاکستان کا جھنڈا کہیں اس لئے تو بلند نہیں کرتے کہ وہ ہم سے مدد چاہتے ہیں، کہیں وہ اپنے شہیدوں کو سبز کپڑے میں اس لئے تو نہیں دفناتے کہ وہ یہ یاد دلا رہے ہوں کہ ایک مسلمان دوسرے مسلمان کا بھائی ہوتا ہے اور مدد مانگتے مانگتے اس دنیا سے چلا گیا؟ کہیں وہ ہمیں نبی کے اس خطبے کی یاد دہانی تو نہیں کرواتے جس کے مطابق پوری مسلم امہ ایک جسم کی مانند ہے اور اگر جسم کے ایک حصے میں بھی تکلیف ہو تو سارا جسم اس تکلیف کو محسوس کرتا ہے۔

تو ہاں! وہ مظلوم کشمیری ہم سے اس مسئلے کو حل کرنے کی مدد مانگ رہے ہیں۔ اس کا حل بھی آنحضرت محمدﷺ کے آخری خطبے میں ہی ہے کہ ساری مسلم امت ایک جسم ہے اور اگر آج ساری مسلم اقوام مل کر صرف یہ قدم اٹھا لیں کہ اپنے تیل پر قابض مغربی قوتوں سے اسے نکال کر اس کی سپلائی مغربی ممالک اور بھارت میں روک دیں اور مطالبہ کریں کہ کشمیر کا مسئلہ جب تک حل نہیں ہو گا یہ سپلائی نہیں کھلے گی اور OIC (اسلامی تعاون تنظیم) کے تمام ممالک مل کر بھارت کو یہ کہہ دیں کہ کشمیر کو خالی کرو ورنہ خلیجی ریاستوں سے تمام بھارتی افرادی قوت واپس بھیج دی جائے گی اور تمام اسلامی ریاستوں میں بھارتی اشیاءکا بائیکاٹ کر دیا جائے گا اور تو اور بھارت کسی بھی خلیجی ریاست کو تجارتی مقاصد کے لئے بھی خواہ اشیاءکی خرید و فروخت ہو یا تجارتی راستہ ہو استعمال کرنے کی اجازت نہیں ہوگی تو یقین رکھیں ایک دن میں ہی یہ 70 سالہ مسئلہ اقوام متحدہ حل کروا دے گا۔

اور کشمیریوں کو روہنگیا کے مسلمان بننے سے بچا لیا جائے گا۔ اس بے حسی کو چھوڑ کر اگر ہم ایک قوم ہو کر تمام مسلم ممالک ایک طاقت بن جائیں تو نہ صرف پوری دنیا پر قابض ہو جائیں گے بلکہ کوئی بیرونی طاقت جو آج ہمیں دہشت گرد کے نام سے پکارتی ہیں آنکھ اٹھا کر دیکھ بھی نہیں سکتی۔ کشمیر کو ایک گولی بھی چلائے بغیر آزادی مل سکتی ہے۔ صرف ایک قدم! صرف ایک قدم

Top 10 Hollywood Movies Box Office Collection All Times

1-Avatar                                                                                          $2,787,965,087

2- Titanic                                                                                        $2,186,772,302

3-  Star Wars: The Force Awakens                                         $2,068,223,624

4- Jurassic World                                                                        $1,671,713,208

5-  The Avengers                                                                         $1,518,812,988 

6-  Furious 7                                                                               $1,516,045,911

7- Avengers: Age of Ultron                                                     $1,405,403,694

8- Harry Potter and the Deathly Hallows – Part 2          $1,341,511,219

9-  Frozen                                                                                  $1,287,000,000

10-  Beauty and the Beast                                                     $1,263,418,671  

Top 10 Bollywood movies box office collection all time

 

 

1- Dangal                                                     ₹2,024.76 crore   (US$320 million)

2- Baahubali 2: The Conclusion            ₹1,725 crore   (US$267 million)

3- PK                                                               ₹792 crore(US$130 million)

4- Baahubali: The Beginning                   ₹650 crore(US$100 million)

5- Bajrangi Bhaijaan                                 ₹626 crore (US$98 million)  

6- Dhoom 3                                                   ₹585 crore (US$100 million)

7-  Sultan                                                       ₹584 crore  (US$91 million)

8- Kabali                                                         ₹477 crore (US$74 million) 

9- Prem Ratan Dhan Payo                         ₹432 crore (US$67 million)

10- Chennai Express                                      ₹423 crore  (US$72 million)

11- 3 Idiots                                                     ₹395 crore (US$82 million) 

  


Top 10 Pakistani Movies Business

1- Jawani Phir Nahi Ani                            ₨49.44 crore (US$4.94 million)

2-Punjab Nahi Jaungi                               ₨45.00 crore (US$4.50 million)

3- Bin Roye                                                  ₨40.05 crore (US$4.00 million)

4-Waar                                                          ₨35.00 crore (US$3.50 million)

5-Wrong No                                                 ₨30.25 crore (US$3.02 million)

6-Actor In Law                                            ₨30.05 crore (US$3.00 million)

7-Janaan                                                       ₨30.00 crore (US$3.00 million)

8-Khuda Kay Liye                                        ₨25.00 crore (US$2.50 million)

9-Ho Mann Jahaan                                     ₨22.50 crore (US$2.25 million)

10-Lahore Se Aagey                                     ₨21.60 crore (US$2.16 million)

کشمیر زلزلہ 8 اکتوبر 2005 ,, Kashmir Earth Quake 08 October 2005

On October 8, 2005, a magnitude 7.6 earthquake shook the Kashmir region (a disputed territory controlled in part by Pakistan and India), along with sections of Pakistan, India and Afghanistan. More than 80,000 people perished as a result of the quake, while an estimated 4 million others were left homeless.

The Kashmir earthquake took place shortly after 8:50 a.m. local time and was centered about 12 miles northeast of Muzaffarabad, the capital of Pakistan-administered Kashmir. (Since 1947, India and Pakistan have fought a series of wars for control of Kashmir. Today, the two nations, along with China, each administer a portion of the region).

In some places, whole sections of towns slid off cliffs and entire families were killed. The Muzaffarabad area suffered severe devastation, and the town of Balakot in the North-West Frontier Province was almost completely destroyed. The quake occurred just before the onset of the region’s harsh winter, exacerbating the disaster’s effects. In addition, landslides wiped out large numbers of the region’s roads, making many of the damaged areas inaccessible to relief workers in the immediate aftermath. In all, more than 80,000 people died as a result of the quake and an estimated 4 million others were left homeless.

کشمیر کا حل آخر کب……….؟؟؟؟؟

کشمیر کا حل آخر کب ہو گا ایک ایسا سوال جو ہر کشمیری کی زبان پر ہے.مگر اس کا جواب شاہد کسی کشمیری کے پاس تو بلکل بھی نہی ہے مگر ایسا ممکن ہو سکتا ہے اگر پاکستان اور بھارت چاھیں تو اس مسلہ کا حل جلد ہی نکل سکتا ہے بھارت مقبوظہ کشمیر اور پاکستان آزاد کشمیر چھوڑنے پر تیار ہو جائیں تو کشمیر کو ایک الگ ملک بنا یا جا سکتا ہے مگر ایسا کام دونوں ملکوں کے سیاست دان کبھی نہی ہونے دیں گے کیونکے ان سیاست دانوں کو اپنی سیا ست بھی تو چلانی ہے اور دونوں ملکوں کو کثیرزرمبادلہ بھی حاصل ہوتا ہے. تو وہ لوگ کشمیروں کی خاتر اپنا نقصان کیوں کریں گے .
اب ہم سب کشمیروں کو اپنی آزادی کے لیے جودوجہد کرنی پڑے گی اور اپنی آ زادی چھین کر لینی پڑے گی.

Aisam-ul-Haq wins ATP World Championship in Chengdu 2017

Jonathan Erlich and Aisam-Ul-Haq Qureshi tasted victory for the first time as a team, claiming the Chengdu Open title on Sunday.

The Israeli-Pakistani duo downed Marcus Daniell and Marcelo Demoliner 6-3, 7-6(3) in one hour and 29 minutes, claiming two of seven break chances. They take home 250 Emirates ATP Doubles Rankings points and split $96,610 in prize money.

“This week is very special,” said Qureshi. “When I came here, I was on one leg and I had an MRI and wasn’t sure if I would even play. I signed up with Jon five minutes before the deadline. He was still in Israel. He took the risk and flew all the way here on Sunday. Thanks to him for trusting in me. I just focused on being the best partner I can be. He showed why he’s won Wimbledon before and been Top 5 and won 19 titles. Everything he touched was a winner. He took over.”

 

نے افغان صدر سے ملاقات کی، علاقائی سلامتی پر تبادلہ خیال Chief Of Army Staff

افغانستان کے صدر آفس کے آفس آفیسر نے ٹویٹ کے مطابق، دونوں رہنماؤں نے دو طرفہ تعلقات، تجارت اور ٹرانزٹ اور دہشت گردی کے خلاف جنگ پر تبادلہ خیال کیا.

آرمی اسٹاف (چیفس) جنرل قمر جاوید باجو نے اتوار کو صدر اشرف غني کے ساتھ دیگر معاملات میں علاقائی سلامتی پر تبادلہ خیال کیا

افغان صدر نے کہا کہ افغانستان اور پاکستان دوستانہ ممالک ہیں اور دونوں کے ساتھ ساتھ دونوں امن اور استحکام کو برقرار رکھے گی.

ملاقاتوں کے دوران، دونوں اطراف نے علاقے میں موجودہ سیکورٹی ماحول اور دو ممالک کے دو طرفہ تعلقات کا جائزہ لیا

“طویل المیعاد امن سے متعلق مسائل، مشترکہ خطرات کے خلاف تعاون، غیر ریاستی اداکاروں، انٹیلی جنس اشتراک، تجارت اور تجارت کے لئے جگہ محدود کرنے کے لئے متعلقہ انسداد دہشت گردی کی مہموں کے درمیان تعاون، اور لوگوں سے رابطے پر تبادلہ خیال کیا گیا” آئی ایس پی آر نے کہا.

What Kashmir’s Want from Indiaکشمیریوں کی اکثریت بھارت سے کیا چاہتے ہیں

 

کشمیریوں کی اکثریت کیا چاہتے ہیں؟ سب سے پہلے، ان کے مستقبل کے کور

 

س کا تعین کرنے کے لئے کشمیروں کے حق کے بارے میں نئی ​​دہلی اور اسلام آباد کے ساتھ ایک اچھا اعتماد کا معاہدہ محفوظ کرنے کے لئے، وقت کا وقت مقرر، اور آگے بڑھنے کے لئے ضروری لامحدود حالات کی وضاحت.

اس کے بعد، سول سوسائٹی اور سیاسی رہنماؤں کو تحریک، مواصلات اور سماج کے گروہوں سمیت مشورہ دینے کے لئے تحریکوں میں عملدرآمد کرے گا، بھارت اور پاکستان کے ساتھ مذاکرات سے پہلے، ایک قرارداد کے حوالہ کے مطابق.

نئی دہلی کے موجودہ نقطہ نظر کو کشمیر پسند کیا چاہتی ہے. اس موسم گرما میں بھارت کے “جامع مذاکرات” کو کشمیر کو بین الاقوامی تنازعات کے طور پر نہیں سمجھتا. اور نہ ہی اس میں شامل ہے: بھارتی فوج، نیم فوجی اور پولیس کی طرف سے غیر معمولی قتل، فوری طور پر روکنے، اور اخلاقیات؛ فوری طور پر روکنے اور اخلاقیات پر، بھارتی فوج، جمہوریت اور پولیس کی طرف سے تشدد، اغوا، نافذ کرنے اور نافذ تشدد کے استعمال؛ سیاسی قیدیوں کی رہائی، بے گھر افراد کی واپسی، اور بے گھر ہونے کے مسئلے کا مقابلہ کرنے کے لئے ایک منصوبہ؛ کشمیر، بھارت اور پاکستان کے درمیان فوری طور پر “نرم سرحدی” پالیسی پر معاہدے، کشمیر کی معیشت کی بحالی کو یقینی بنانے کے لئے؛ کشمیریوں کے شہری آزادیوں، سول نافرمانی کے حق سمیت، تقریر، اسمبلی، مذہب، تحریک اور سفر کی آزادی سمیت غیر مداخلت کے معاہدے.

نئی دہلی نے انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی حد کو تسلیم کرنے سے انکار کر دیا ہے، اور وہ اقتدار کو برقرار رکھنے کے لئے کس طرح انحصار ہیں. نئی دہلی نے وضاحت نہیں کی ہے کہ کشمیریوں میں عسکریت پسندوں کو غیر قانونی طور پر کشمیروں کو برباد کرنے کے لئے استعمال کیا جاتا ہے، جب کشمیر میں سرحدی زونوں کو محفوظ رکھنے کے لئے ہندوستانی فوجیں ہیں.

بھارت کی “جامع بات چیت” میں غیر فعال ڈراپریشن کے منصوبے اور تمام طاقتور قوانین کی فوری طور پر ردعمل شامل نہیں ہے. اور نہ ہی اس میں شامل ہے: شفاف شناخت اور حراست اور تشدد کے مراکز کو ختم کرنے کی منصوبہ بندی، جس میں فوج کیمپوں سمیت شامل ہیں؛ حق اور جسٹس کمیشن کو انسٹال کرنے کے لئے نقصان کا حساب اور سیاسی اور نفسیاتی تعصب کے لۓ ایک منصوبہ؛ بھارتی فوجی، نیم فوجی اور پولیس کی طرف سے کئے جانے والے انسانیت کے خلاف جرائم کی تشکیل کی نامعلوم اور بڑے قبروں میں بین الاقوامی اور شفاف تحقیقات کی ایک منصوبہ. اس طرح کی ناکامیاں کسی بھی پروسیسنگ سے متعلق ہیں جو “قرارداد” کا وعدہ کرتے ہیں.