سرینگر/نئی دہلی مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجی کیمپ پر ہفتہ کو مجاہدین کے حملے ۔

سرینگر/نئی دہلی مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجی کیمپ پر ہفتہ کو مجاہدین کے حملے میں 10بھارتی فوجی ہلاک ہوئے ، بھارتی وزارت دفاع نے ہلاکتوں کی تصدیق کردی ۔غیر ملکی خبررساں ادارے کو بھارتی وزارت دفاع نے تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ چار مسلح افراد ہفتہ 10 فروری کو علی الصبح جموں شہر کے مضافات میں واقع بھارتی فوج کے ایک انفنٹری کیمپ میں داخل ہو ئے اور داخل ہوتے ہی اندھا دھند فائرنگ شروع کردی جس کے نتیجے میں 10بھارتی فوجی ہلاک ہو گئے ۔

Pakistan tour of New Zealand, Series Schedule 2018

Pakistan’s tour to New Zealand is scheduled to start from January 6 and it will consist of five One Day Internationals (ODIs) and three Twenty20 Internationals (T20Is). The ODI series will be played from January 6-19 whereas the T20I series will be played from January 22-28. Pakistan’s squad for the series will be led by Sarfraz Ahmad.

Jan 06, Saturday: New Zealand vs Pakistan 1st ODI Wellington 3:00 AM PST

Jan 09, Tuesday: New Zealand vs Pakistan 2nd ODI Nelson 3:00 AM PST

Jan 13, Saturday: New Zealand vs Pakistan 3rd ODI Dunedin 3:00 AM PST

Jan 16, Tuesday: New Zealand vs Pakistan 4th ODI Hamilton 6:00 AM PST

Jan 19, Friday: New Zealand vs Pakistan 5th ODI Wellington 3:00 AM PST

Pak vs NZ squad for ODIs

Captain and Wicket-Keeper: Sarfraz Ahmed

Opening Batsmen: Azhar Ali, Fakhar Zaman, Imam ul Haq

Middle Order: Babar Azam, Shoaib Malik, Mohammad Hafeez, Haris Sohail

All Rounders: Faheem Ashraf, Aamer Yamin, Mohammad Nawaz, Shadab Khan

Fast Bowlers: Mohammad Amir, Hasan Ali, Rumman Raees

Head to Head Pak vs NZ – Series History

Pakistan has played an ODI series in New Zealand 12 times since 1973. The results show that New Zealand has a definite edge over Pakistan on their home turf.

Pakistan has won only 2 out of the 12 series played in New Zealand. New Zealand have bagged 9 series wins whereas one series ended in a draw in 1995/96.

The last time Pakistan won an ODI series in New Zealand was in 2011 under the captaincy of Shahid Afridi. Misbah-ul-Haq was the top scorer for Pakistan in that series.

Overall 20 series have been played between two sides with New Zealand winning 12 and Pakistan 7.

Kashmir …..!!!!!!!! Need Attention

یاد دہانی کیلیے ایک مختصر جائزہ:

“راج ترنگی” ۱۱۵۰ میں پنڈت کلھن نے لکھی (۵۰۰۰ سال کی تاریخ)
۱۳۲۰ میں بدھ حکمران رنچن، بلبل شاہ کی تعلیمات سے متاثر ہو کر مسلمان ہوا۔

شاہ میری خاندان: ۱۳۳۸ – ۱۵۴۶ (۲۰۸ سال)
چک خاندان: ۱۵۵۴ – ۱۵۸۶ (۳۲ سال)
مغلیہ دور: ۱۵۸۶ – ۱۷۵۲ (۱۶۶ سال) (اکبر سے آغاز ہوا)
افغان دور: ۱۷۵۲ – ۱۸۱۹ (۶۷ سال) (احمد شاہ ابدالی سے)
سکھ دور: ۱۸۱۹ – ۱۸۴۶ (۶۶ سال) (رنجیت سنگھ)
ڈوگرہ ہندو دور: ۱۸۴۶ – ۱۹۴۷ (۱۰۱ سال) (گلاب سنگھ سے آغاز)۔

رقبہ:
شمال سے جنوب: ۶۴۰ کلو میٹر
مشرق سے مغرب: ۴۸۰ کلو میٹر
ٹوٹل رقبہ: ۸۴۴۷۱ مربع میل یا ۲۱۸۷۷۹ مربع کلو میٹر
۱۳۵ آزاد ممالک سے بڑی ریاست

Asian Bil Gates “” Malik Riaz “” ’’ ایشیا کا بل گیٹس

ملک ریاض کا شمار پاکستان ہی نہیں ایشیا کے امیر ترین افراد میں ہوتا ہے، آپ کو ایشیا کا بل گیٹس بھی کہا جاتا ہے۔ فلاحی کاموں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لینے پر آپ کو لندن میں سروس ٹو ہیومنٹی ایوارڈ سے نوازا گیا۔ان کی پیدائش 8فروری 1954سیالکوٹ پاکستان میں ہوئی، قومیت کے اعتبار سے اعوان برادری سے تعلق ہے۔ کنسٹرکشن کے پیشہ سے وابستہ ہیںاور پاکستان کی سب سے بڑی کنسٹرکشن کمپنی کے مالک ہیں ۔ فلاحی کاموں میں بھی مصروف رہتے ہیں، قدرتی آفات کے دوران امدادی کارروائی میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیتے ہیں مگر وہ شروع سے ہی اتنے امیر کبیر نہ تھے ۔ ان کا ماضی انتہائی محنت اور مشقت سے عبارت ہے ، انہوںں نے انتہائی غربت  بھی دیکھی ۔ آج ان کے پاس اتنی دولت کیسے آئی ۔ اس دولت کو وہ رب کا فضل قرار دیتے ہیں اور تین اعمال کا نتیجہ قرار دیتے ہیں۔ وہ اپنے انتہائی مشکلات سے دوچار ماضی کا ذکر کرتے ہوئے بتاتے ہیں کہ میری چار بیٹیاں اور ایک بیٹا ہے۔ غربت کے دنوں میں ایک بار میری سب سے بڑی بیٹی بیمار ہو گئی اور اس وقت میرے پاس اتنا پیسہ بھی نہیں تھا کہ میں اسے ڈاکٹر کے پاس لے جانے کیلئے ٹیکسی ، رکشہ کا کرایہ بھی ادا کر سکوں۔میں اس وقت راولپنڈی میں رہتا تھا۔میں راولپنڈی کے اس وقت کے سینٹرل ہاسپٹل اور آج کے بینظیر بھٹو ہسپتال میں بیٹی کو علاج کی غرض سے لے کر گیا۔جس رکشہ میں بیٹی کو ہسپتال لے کر گیا اس رکشہ کا کرایہادا کرنے کیلئے جیب میں پیسے نہ تھے، بیٹی کا چیک اپ کروا کر جب اسی رکشہ میں واپس گھر لوٹا تو گھر سے کچھ قیمتی سامان اٹھا کر اسی رکشہ میں رکھا اور بازار میں جا کر بیچ کر بیٹی کی دوائیاں خریدیں اور رکشے کا کرایہ ادا کیا۔آج میرا ذکر پاکستان کے امیر ترین افراد میں کیا جاتا ہےجو اللہ تعالیٰ کی خاص عطا اور فضل کی بدولت ہی ممکن ہے۔سعودی عرب میں ایک فوڈ کمپنی جس کا نام ’’لبیک ‘‘ہےاس کے مالک بھی ملک ریاض کی طرح یہ تین عمل کرتے ہیں۔ اس عمل سے قبل انہیں بالکل بھی امید نہ تھی کہ ان کا کاروبار اتنے عروج پر جائے گا اور آج پورے سعودی عرب میں سب سے زیادہ بڑی فوڈ کمپنی’’لبیک‘‘ہے۔ ’’لبیک‘‘کے مالک بھی

اپنی دولت کا رازانہیں تین چیزوں کو بتاتے ہیں۔ملک ریاض بتاتے ہیں کہ قرض کے لغوی معنی ہیں کاٹنا یعنی اپنے مال کا ایک حصہ کاٹ کر اللہ کے راستے میں دیتا ہوں یعنی ’’اللہ پاک کو قرض دیتا ہوں‘‘جس پر اللہ تعالیٰ بدلے میں اس سے کئی گنا زیادہ بدلے میں عطا کر دیتے ہیں۔میں محتاج افراد کی مدد کرتا ہوں جس سے میرے مال میں کبھی کمی واقع نہیں ہوتی بلکہ اللہ پاک کی رضا کیلئےجو مال مسکینوں، غریبوںاور ضرورت مندوں کو دیتا ہوںاس میں اللہ پاک کئی گنا زیادہ اضافہ فرما دیتے ہیں جبکہ اللہ کا وعدہ ہے کہ آخرت میں بھی اس کا صلہ ملے گا یعنی میں دنیاوی اور اخروی دونوں طرح کے فائدوں سے نوازا جا رہاہوں اور جائوں گا۔ بے شک آپ کے پاس زیادہ مال و دولت نہ بھی ہو جتنا بھی اس کا ایک حصہ اپنی مرضی سے اللہ پاک کے راستے میں خرچ کرنے کیلئے

وقف کر لیں۔میرا دوسرا عمل یہ ہے کہ میں اللہ کے گھر مساجد تعمیر کرتا ہوں ،مساجد کی تعمیر میں میں نے کبھی بھی مال و دولت کی پرواہ نہیں کی اس کی تعمیر ، تزئین و آرائش، نمازیوں کی سہولیات کیلئے دل کھول کر خرچ کرتا ہوں جس کی بدولت اللہ تعالیٰ میرے مال و دولت میں اضافہ کرتے ہیں۔ تیسرا عمل یہ ہے کہ میں چاہے سفر میں ہوں یا کہیں بھی مـصروف ہوں میں اللہ کے ذکر کیلئے وقت ضرور نکالتا ہوںاور اللہ کا ذکر کرتا ہوں۔ملک ریاض بتاتے ہیں کہ میں چار ذکر کئے بغیر اپنے دن کا آغاز نہیں کرتا یہ ذکر صحیح احادیث سے

ثابت ہیں جن میں’’ 100مرتبہ سبحان اللہ، 100مرتبہ الحمد اللہ ، 100مرتبہ اللہ اکبر اور 100مرتبہ لا الہ الا اللہ ‘‘ہیں۔100مرتبہ سبحان اللہ پڑھنے سے مجھے 100غلام آزاد کرنے کا ثواب مل جاتا ہے، 100مرتبہ الحمد اللہ پڑھنے سے میرے لئےجنت میں 100گھوڑے رکھ دئیے جاتے ہیں،100مرتبہ اللہ اکبر پڑھنے سے 100اونٹ اللہ کے راستے میں قربان کرنے کا ثواب مل جاتا ہے جبکہ 100مرتبہ لا الہ الا اللہ پڑھنے سے زمین و آسمان کے درمیان میری لئے نیکیاں بھر دی جاتی ہیں۔یہ وہ تین اعمال ہیں جن کی بدولت اللہ رب العزت نے مجھے نواز رکھا ہے۔

 

سعودی عرب اسرائیل اور راحیل شریف Pakistan saudia and Isriel ۔ !

اسرائیل کے سب سے بڑے اخبار ہیرٹز نے اپنی 2015ء کی اشاعت میں لکھا کہ ۔۔۔
” پاکستان ایران کی طرح آئے دن اسرائیل کو دھمکیاں نہیں دیتا۔ لیکن پاکستان ہی اسرائیل کے لیے اصل اور حقیقی خطرہ ہے ایران کی بہ نسبت” ۔۔۔
کچھ ہی عرصے بعد یروشلم پوسٹ نے دوبارہ سرخی جمائی کہ ۔۔۔
” پاکستان کے سپاہ سالار راحیل شریف نے کہا ہے کہ اگر سعودی عرب کو خطرہ ہوا تو ایران کو دنیا کے نقشے سے مٹا دیا جائیگا” ۔۔۔۔
جب راحیل شریف سعودی عرب میں ” مسلم اتحاد ” کے نام سے بنائی گئی فوج کے سربراہ بنے تو مختلف اسرائیلی مبصرین نے اسکو پاک فوج کی سعودی عرب میں اپنا اثر رسوخ بڑھانے کی کوشش قرار دیا۔
اس کے بعد اچانک پاک آرمی کے آفیسرز بڑی تعداد میں مسلم اتحادی فوج کی تربیت کے لیے سعودی عرب پہنچنا شروع ہوئے۔
چند ہفتے پہلے ہندوستان ٹائمز اور اسرائیلی اخبارات نے جلی حروف میں یہ خبر چھاپی کہ ” سعودی عرب کو درپیش خطرات کے پیش نظر پاک فوج کم از کم 3000 سپاہی یا ایک برگیڈ فوج سعودی عرب بھیجنے کی تیاری کر رہی ہے جو وہاں جنگی لحاظ سے ایکٹیو سرحدوں پر حفاظت کریگی” ۔۔۔
امریکی اخبار دی ڈپلومیٹ نے لکھا کہ ” آخر پاکستان اس وقت ہی سعودی عرب اپنے فوجی دستے کیوں بھیجنا چاہتا ہے؟” ۔۔ کچھ ایسی ہی تشویش کا اظہار اسرائیل اور پاکستان میں کام کرنے والی ایک مخصوص لابی نے بھی کیا۔
اسرائیلی مبصرین کے مطابق سعودی عرب آنے والے دنوں میں اپنے دفاع کےلیے مکمل طور پر پاکستان یا دوسرے لفظوں میں پاک فوج پر اںحصار کرے گا۔
راحیل شریف کو اس وقت سعودی عرب میں سب سے طاقتور غیر عرب شخصیت سمجھا جاتا ہے اور سعودی عرب کے موجودہ ولی عہد محمد بن سلمان کے بہت زیادہ قریب۔
یہ بھی کہا جارہا ہے کہ شریف خاندان کو سعودی حکمرانوں کی طرف سے کوئی لفٹ نہ ملنے کے پیچھے بھی راحیل شریف کا دباؤ تھا اور یہی دباؤ دبئی میں بھی کام کر رہا ہے۔
ان چند دنوں میں سعودی عرب میں دو بہت بڑے واقعات ہوئے۔
لبنانی وزیراعظم نے سعودی عرب جاکر استعفی دے دیا یا یوں کہہ لیں کہ ایک طرح سے پناہ لے لی اور وہاں سے حزب اللہ کے خلاف بیان جاری کیا۔
جبکہ دوسری طرف سعودی عرب میں کرپشن کے الزام میں اچانک بہت بڑے بڑے لوگوں کی گرفتاریاں عمل میں آئیں ہیں جن میں زیادہ تر وہ ہیں جو اسرائیل کے قریب سمجھے جاتے تھے۔ گرفتار ہونے والوں میں سب سے بڑا نام پرنس ولید بن طلال کا ہے۔ دنیا کا سب سے امیر مسلمان ۔۔۔۔۔۔ 🙂
ان دونوں معاملات کو اسرائیلی وزیراعظم نیتھن یاہو نے ” ویک اپ” کال قرار دیا اور یہ بھی کہا ہے کہ انہیں ایران سے لڑانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔
یہ خبریں ہیں۔ ان کو جوڑ کر نتائج اخذ کرنا زیادہ مشکل نہیں کہ کون کیا کر رہا ہے۔
کچھ عرصہ پہلے کسی نے افواہ اڑائی تھی کہ راحیل شریف واپس آرہا ہے۔ کچھ دوستوں نے مجھ سے پوچھا تو میں نے کہا تھا کہ ” وہ محاذ پر گیا ہوا سپاہی ہے۔ اپنے نخرے پورے کرنے نہیں بلکہ لڑنے گیا ہے اور اتنی آسانی سے واپس نہیں آئیگا۔۔۔۔
میرے خیال میں سعودی عرب میں موجود مقامات مقدسہ اور سعودی عرب کی عالم اسلام میں ایک مرکزی حیثیت کے پیش نظر پاک فوج ہرگز نہیں چاہے گی کہ وہاں بھی عراق و شام کی طرح حالات خراب ہوں۔ جس کے لیے وہ اپنے طور پر ابھی سے پیش بندی کر رہی ہے۔
یہ چیز ہمیں نظر نہیں آرہی لیکن شائد امریکہ اور اسرائیل کو نظر آنے لگی ہے۔
نوٹ ۔۔۔ ہمارا تو یہ حال ہے کہ عمر شریف جیسے بھانڈ میراثی اور مسخرے بھی راحیل شریف کا مذاق اڑانے لگے تھے۔ الو کے پٹھے۔۔۔۔۔۔ !

Gawadar Port Game Changer For Pakistan

یہ بات تو طے ہے کہ گوادر کا متبادل آبی گذرگاہوں میں موجود نہیں۔ نہ ایران نہ انڈیا نہ اس خطہ میں شامل کوئی اور..
یہاں اس کا سرسری سا موازنہ پیش کرتے ہیں۔
چاہ بہار کی زیادہ سے زیادہ سالانہ کارگو گنجائش 10 سے 12 ملین ٹن ہے۔
انڈیا میں کل 212 قابل ذکر بندرگاہیں ہیں۔ جنکی کی مجموعی سالانہ کارگو گنجائش 500 ملین ٹن ہے۔
جبکہ انکے مقابلے میں گوادر اکیلا 400 ملین ٹن کارگو سالانہ کی گنجائش رکھتا ہے۔
انڈیا کو بھول جائیں۔ امریکہ کی سب سے بڑی بندرگاہ کی سالانہ مجموعی کارگو گنجائش 80 ملین ٹن ہے۔ جو گوادر کا 20 فیصد ہے۔
درحقیقت دنیا کی کوئی بندرگاہ گوادر کا مقابلہ کر ہی نہیں سکتی۔
عنقریب پاکستان کا یہ ساحلی شہر ہانگ کانگ اور دبئی کا جڑواں کہلائے گا۔
اس پاکستان کو اللہ نے اتنا بڑا موقع دیا ہے کہ آپ کی سوچ ہے۔ اس کو کسی بھی طرح ضائع نہیں ہونے دینا۔ اب یہ ہمارے بڑوں پر ہے کہ وہ اس کو کیسے کیش کرتے ہیں!!
اور ہاں ہندوستان کو یہ منصوبہ ناقص لگتا ہے یعنی پاکستان کیلئے حقیقتاً اس میں فلاح ہے . جو مقام اور اہمیت عالمی برادری میں پانے کیلئے مودی اپنی حکومت کے پہلے دن سے ساری دنیا کی خوش آمدیں کرتے ہوئے چھلانگے لگا رہا وہ مقام محض گوادر پورٹ کی کامیابی پاکستان کو دلا دیگی اور کافی حد تک ہم عالمی تنہائی کا سینہ چاک بھی کرچکے ہیں ۔ باقی یہ منصوبہ پاکستان کی فلاح کا منصوبہ ہے لہذا اس میں سے مینگنیں نکالنے والے لوگ یعنی ہماری آستین کے سانپ کون ہیں یہ تو آپ سب بخوبی جانتے ہی ہونگے 😉
اسلام زندہ باد
پاکستان پائندہ باد

PSL 03 draft to be held on November 12

1. 

official draft for the third edition of the PSL T20 is all set to be held on 12th of November.

While all the 6 teams participating in the PSL 2018 have already announced their top 9 picks from previous squads, the official draft will allow them to complete their squads.

Lahore Qalandars will have the first pick in the Platinum and Diamond round of the draft. In the Gold round, Karachi Kings will get the first chance to pick their player.

Below is the complete pick order for the PSL 2018 draft.